ڈنمارک میں مکمل نقاب پہننے پر خاتون کو جرمانہ

ڈنمارک میں مکمل نقاب پہننے پر خاتون کو جرمانہ

Woman In Denmark Fined For Wearing Full Face Veil

Woman In Denmark Fined For Wearing Full Face Veil

 

بدھ سے نافذ ہونے والی نئی پابندی کے تحت مکمل نقاب پہننے والی 28 سالہ

خاتون ڈنمارک میں پہلی ایسی خاتون بن گئی ہے جس پر جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔

خاتون پولیس کی توجہ میں اس وقت آئی جب اس کے اور ایک دوسری خاتون کے درمیان

شمال مشرقی علاقے نورڈزجیلینڈ کے ایک شاپنگ سینٹر میں جھگڑا شروع ہوگیا۔

جب اس نے نقاب ہٹانے سے انکار کیا تو اسے بتایا گیا کہ

اسے 1,000 کرونر (134 یورو) ادا کرنا ہوں گے۔

جمعہ کو ہونے والے واقعے کی ابتدائی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ

ایک خاتون دوسری کا نقاب ہٹانے کی کوشش کر رہی تھی لیکن پولیس نے کہا

کہ یہ واضح نہیں ہے۔پولیس نے واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرلی۔

پولیس کے ترجمان ڈیوڈ بورچرسن نے ڈینش رٹزاؤ نیوز ایجنسی کو بتایالڑائی کے دوران

اس کا نقاب اتر گیا لیکن جب تک ہم پہنچے اس نے اسے دوبارہ پہنا دیا تھا۔

پولیس نے کہا کہ دونوں خواتین پر امن کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا گیا ہے

ایک پر پورے چہرے کے نقاب کے قانون کی خلاف ورزی کا الزام بھی عائد کیا گیا ہے

بدھ تک پورے چہرے کا پردہ یا نقاب پہننے پر جو صرف آنکھیں دکھاتا ہے

پر 1,000 کرونر چارج ہوتا ہے۔بار بار مجرموں پر 10,000 کرونر (1,340 یورو) بھی چارج کیا جا سکتا ہے۔

ڈنمارک میں نئے قانون کے خلاف مظاہرے پھوٹ پڑے جس میں

بالکلاواس ماسک اور جھوٹی داڑھی پر بھی پابندی ہے۔

نقاب پہننے کے خلاف اسی طرح کی مکمل یا جزوی پابندی فرانس، آسٹریا، بلغاریہ

اور جرمن ریاست باویریا میں بھی ہے۔

You May Also Like: Where In Europe Is The Full-Face Veil Banned

Leave a Reply

Your email address will not be published.