وصیلہ توسل امام حسین علیہ السلام

وصیلہ توسل امام حسین علیہ السلام

The Wasilah Tawassul Of Imam Hussein (a.s.)

The Wasilah, Tawassul Of Imam Hussein (a.s.)

جب امام حسین علیہ السلام کی ولادت ہوئی تو اللہ سبحانہ و تعالیٰ نے

حضرت جبرائیل علیہ السلام کو پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی آل کو مبارکباد دینے کے لیے بھیجا۔

راستے میں جبرائیل علیہ السلام آسمان سے اترتے ہوئے ایک جزیرہ سے گزرے

جس پر فرشتہ فطرس کو اللہ تعالیٰ نے اس لیے بھیجا تھا کہ وہ شرارتی تھا۔

فطرس کے پروں کو بھی اللہ نے چھین لیا تھا۔

فطرس نے جبرائیل علیہ السلام کو دیکھا تو پوچھا کہ کہاں جا رہے ہو؟

 

حکم سے راضی

 

جبرائیل (علیہ السلام) نے انہیں بتایا کہ وہ پیغمبر اکرم (ص) اور ان

کے اہل خانہ کو ولادت امام حسین (ع) کی مبارکباد دینے جارہے ہیں۔

انہو نے پوچھا کہ کیا وہ بھی اس کے ساتھ جا سکتا ہے۔ جبرائیل (علیہ السلام) اللہ

کے حکم سے راضی ہوگئے اور انہیں زمین پر لے گئے۔

 

اہل خانہ کو مبارکبا

 

جب فرشتے حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پاس پہنچے

اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو اور آپ کے اہل خانہ کو مبارکباد دی

تو حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فطرس سے فرمایا کہ امام حسین علیہ السلام کے پاس جاؤ۔

جب فطرس نے امام حسین علیہ السلام کے جھولے کو چھوا تو اس کے پروں کو اللہ تعالیٰ

نے واپس دے دیا جس نے اسے معاف کر دیا تھا۔

اگر آپ کچھ چاہتے ہیں تو بہتر ہے کہ ہمارے امام (ع) سے مانگیں

کیونکہ وہ ہم سے زیادہ اللہ کے قریب ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.