یونائیٹڈ اسٹار پال پوگبا مانچسٹر نے یکجہتی کا مظاہرہ کیا ہندوستان میں مسلم طلبہ کے حجاب پہننے کے لیے

یونائیٹڈ اسٹار پال پوگبا مانچسٹر نے یکجہتی کا مظاہرہ کیا

ہندوستان میں مسلم طلبہ کے حجاب پہننے کے لیے

United Star Paul Pogba Manchester Shows SolidarityFor Hijab

Wearing Muslim Students In India

 

The Manchester United Star Paul Pogba Shows Solidarity For Hijab Wearing Muslim Students In India

مانچسٹر یونائیٹڈ کے سپر اسٹار پال پوگبا جن کے سوشل میڈیا فیس بک

انسٹاگرام اور ٹویٹر پر 85 ملین سے زیادہ فالوورز ہیں، نے جمعرات کو

ہندوتوا موبس پر مشتمل ایک ویڈیو پوسٹ کرکے کرناٹک حجاب قطار

کے بارے میں بات کرنے کا فیصلہ کرنے کے بعد ہندوستان میں

اپنے پیروکاروں کو کھونا شروع کردیا۔

 فرانسیسی فٹ بالر 

 

فرانسیسی فٹ بالر نے انسٹاگرام پرجانا اور کرناٹک کے مسلمان طلباء

کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے کی کوشش میں ہندوستان میں جاری

حجاب کے تنازع کو اجاگر کرنے کے لیے ایک کہانی شیئر کی۔ 

انسٹھ سیکنڈ  کی ویڈیو جو انہوں نے اپنی انسٹاگرام اسٹوری پر پوسٹ کی تھی

اس کا عنوان تھا  ہندوتوا کے ہجوم ہندوستان میں کالج جانے والی

حجاب پہننے والی مسلم لڑکیوں کو ہراساں کرتے رہتے ہیں۔

  فٹبالر کی تازہ ترین سوشل میڈیا سرگرمی نےیقینی طور پر ہندوستان میں

ہزاروں ٹویٹر صارفین کی توجہ اپنی طرف مبذول کرائی حجاب کے

تنازعہ پر ہندوتوا کے ہجوم پر تنقید کرنے کے فوراً بعد کل چار ہزار

ٹویٹس میں پوگبا کے نام کا ذکر کیا گیا۔

 کرناٹک ریاست 

 

کرناٹک ریاست میں تعلیمی اداروں میں مسلم طلباء کے حجاب پہننے

کے خلاف مظاہرے بڑھ گئے ہیں اور کچھ جگہوں پر مظاہروں نے

پرتشدد شکل اختیار کر لی ہے۔

یہ احتجاج 4 فروری کو ریاستوں کے اڈوپی ضلع کےگورنمنٹ پی یو کالج میں

اس وقت شروع ہواجب حجاب پہنے ہوئے کچھ طالب علموں نے

بتایا کہ انہیں کلاس رومز میں جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔

 مسلم طلباء 

 

مسلم طلباء کے حجاب پہننے کے خلاف احتجاج کرنے کی کوشش میں

کئی ہندو طلباء نے زعفرانی اسکارف پہنے تعلیمی اداروں میں نمودار ہوئے۔

مظاہروں کے بعد  وزارت اعلیٰ تعلیم کے تحت تین دن کی تعطیلات نافذ

کر دی گئی تھیںاور محکمہ کالجیٹ اینڈ ٹیکنیکل ایجوکیشن کے تحت اعلیٰ

تعلیم 9 فروری سے شروع ہوئی تھی۔

 کرناٹک ہائی کورٹ 

 

کرناٹک ہائی کورٹ نے طلباء سے کہا کہ وہ کسی بھی قسم کے کپڑے نہ پہنیں۔

ایسے تعلیمی اداروں کے کیمپس جو معاملہ حل ہونے تک لوگوں کو اکسا سکتے ہیں۔

پال پوبگا کے علاوہ ایک اور نمایاں نام جس نے بھارت میں جاری

صورتحال پر بھی روشنی ڈالی ہے۔

 نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی 

 

ملالہ نے کہا کہ خواتین کو ان کے حجاب میں کالج جانے کی اجازت دینے سے

انکار خوفناک ہےاور رہنماؤں کو مسلم خواتین کی پسماندگی کوچھوڑنے کے

لیے اقدامات کرنے چاہییں۔

You may also like: Students Protesting In Karnataka, India Over Hijab Ban In All Educational Institution

Leave a Reply

Your email address will not be published.