بچوں کو سمجھنے کے بارہ طریقے

بچوں کو سمجھنے کے بارہ طریقے

Twelve Ways To Understand Kids

 

Understand Your Kids Better These Are- The- twelveWays- To

 

بچوں کو سمجھنا دنیا کی سب سے مشکل چیز ہے۔

 بارہ طریقے ہیں جو بچوں کو

سمجھنے میں مددکرتے ہیں۔

نمبر 1

بچوں کا مشاہدہ کریں

Observe Of Childrens

بچوں کے معمولات پر نظر رکھیں۔

  بچے  بدتمیز ہو رہے ہیں تو ان کے

رویے کو تبدیل کریں۔

نمبر 2

بچوں کے دوست بنیں

Be To Children Friends

 بچوں کے ساتھ دوستی کریں

تاکہ بچے آرام محسوس کرے۔

اگر بچے غلطی کرتے ہیں تو  

مارنےاور دھکیلنے کے بجائے

شائستگی سے درست کریں۔

نمبر3

بچوں کے ساتھ وقت گزاریں

Spend Time With Childrens

 بچوں کے ساتھ وقت گزاریں

تاکہ آپ  بچوں کی شخصیت

کے بارے میں جان سکیں۔

نمبر4

بچوں کو ذمہ دار بنائیں

Make Childrens Responsible

بچوں کو ذمہ دار بنائیں تاکہ

بچے  آپ کا  احترام کریں۔ 

اس میں خود دودھ پینا، یا کھانے کے

بعد دسترخوان صاف کرنا وغیرہ شامل ہیں۔

نمبر5

 بچوں کی بات سنیں

Listen To Talk Childrens

بچوں کی بات سنیں۔

اگر بچے کوئی احمقانہ بات کہتا ہے

تو  نہ صرف ہنسیں بلکہ

بات کوسنجیدگی سے لیں۔

نمبر 6

  بچوں پر کبھی الزام نہ لگائیں

Never Ever Accuse Childrens

بچوں پر کبھی الزام نہ لگائیں۔

اگربچےغلطی کرتے ہیں تو انہیں سمجھا ئیں 

تاکہ بچےدوبارہ غلطی نہ  کریں ۔

نمبر 7

 بچوں پر بھروسہ کریں

Trust on Children

بچوں پر بھروسہ کریں۔

اگر آپ کوبچوں پر کوئی شک ہے

تو شائستہ گفتگو سے تمام شکوک

و شبہات کو دور کریں۔

نمبر8

گھریلو معاملات میں بچے سے مشورہ لیں

Take Childrens Advise In Household Matters

 گھریلو گھریلو معاملات سے 

بچوں کو دوررکھاجاتا ہے

بچے  گھر کا بڑا حصہ ہیں۔

اور بچوں کا نقطہ نظر اہم ہے۔

نمبر 9

بچوں کی دلچسپیوں کو جانیں

Know Childrens Interests

اگر بچےپینٹ کرنا پسند کرتے ہیں

تو بچوں کو ڈاکٹر بننے پر مجبور نہ کریں۔

بچوں  کی دلچسپی کو جانیں اور انہیں

 کیریئر منتخب کرنے دیں۔

نمبر 10

 وعدے پورے کریں

Fulfil Promises

اگر آپ وعدہ کرتے ہیں

تو اسے پورا کریں ۔

آپ نے وعدہ  توڑ دیا تو  بچے

آپ پر پرو سہ نہیں  کریں گے۔

اور آپ کی ہر بات پر شک  کریں گے۔

نمبر 11

بچوں کو کچھ جگہ دیں

Give Childrens Some Space

بچوں پر چوبیس گھنٹے نظر رکھنے کی

کوشش نہ کریں۔

بچےچڑ چڑے ہوتے ہیں

اور بچےآپ کو نظر انداز کرنا شروع کر دیتے ہیں۔

نمبر 12

 “بچوں”  کو “بچہ” بننے دو”

Let “Childrens” Be A “Kid”

بچوں سے یہ توقع نہ کریں کہ  ایک بالغ کی

طرح کام کرے گا۔

اور اگر آپ کا بچہ بالغ ہونے کی

کوشش کر رہا ہے توبچے کوسمجھا ئیں۔ 

 

You may also like: Duas Of  Prophets Important In Islam

Leave a Reply

Your email address will not be published.