ٹریژری پیٹر

ٹریژری پیٹر

Treasury Petra

Treasury Petra

 

ٹریژری کے نام سے جانی جانے والی یہ عمارت پیٹرا میں ان عمارتوں میں سے ایک ہے

جو نباتیوں نے تعمیر کی تھی جو کافر مذہب کی پیروی کرتے تھے اور ثمود کے لوگوں سے قریبی

تعلق رکھتے تھے۔ وہ چٹانوں پر نقش و نگار بنانے کی اپنی وسیع مہارت کے لیے مشہور تھے۔

نباتین سامی لوگ تھے، جنوبی اردن کے عرب، کنعان اور عرب کے شمالی حصے،پیٹرا

ہور پہاڑ کی ڈھلوان پر واقع ہے اور وادی موسیٰ (موسیٰ کی وادی) کے قصبے کے قریب ہے۔

موسیٰ (علیہ السلام) کے بھائی ہارون (علیہ السلام) قریب ہی دفن ہیں جیسا کہ ان کی بہن مریم

بھی ہیں۔نباطین زمانہ جاہلیت کے عرب دیوتاؤں اور دیوی دیوتاؤں کے ساتھ ساتھ ان کے

چند معبود بادشاہوں کی پوجا کرتے تھے۔ چٹان میں کھدی ہوئی بہت سی مورتیاں ان دیوتاؤں

اور دیویوں کی عکاسی کرتی ہیں۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے زمانے میں کفار کی طرف

سے جن بتوں کی پرستش کی جاتی تھی، ان میں سے تین بتوں، لات، عزیٰ اور منات کی ابتداء

نباطین سے ہوتی ہے۔ وہ اللہ کی بیٹیوں کو مانتے تھے۔پیٹرا کے داخلی راستے کے ارد گرد نظر

آنے والی پہلی چیزوں میں سے ایک تین بڑے بلاکس ہیں، جو 6 سے 8 میٹر بلند ہیں۔ روایت ہے

کہ ان میں ’جن‘ تھے جو شہر کی حفاظت کے لیے رکھے گئے تھے۔

YOU MAY ALSO LIKE:  IMAM ABU HANIFA (699-769AD)

Leave a Reply

Your email address will not be published.