پیاسا کتا

پیاسا کتا

Thirsty dog

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا

ایک آدمی راستے پر چل رہا تھا۔

وہ بہت پیاسا ہو گیا.پھر وہ ایک کنویں کے پاس آیا

اس میں اترا، (اس کا پانی) پیا اور پھر باہر نکلا۔

اسی دوران اس نے ایک کتے کو دیکھا جو زیادہ  پیاس کی

وجہ سے ہانپ رہا تھا اور مٹی چاٹ رہا تھا۔

اس آدمی نے اپنے آپ سے کہا، “

یہ کتا بھی پیاس کی اسی حالت میں مبتلا ہے جیسا کہ میں تھا۔”

چنانچہ وہ (دوبارہ) کنویں میں اترا

اور اپنا جوتا (پانی سے) بھر کر منہ میں پکڑا اور کتے کو پانی پلایا۔

اللہ تعالیٰ نے اس کا شکر ادا کیا اور اسے معاف کر دیا۔

لوگوں نے پوچھا: یا رسول اللہ! کیا

جانوروں کی خدمت کرنے میں ہمارے لیے کوئی ثواب ہےاس نے کہا

(ہاں) کسی بھی جاندار (جاندار) کی خدمت کرنے کا اجر ہے۔

 

You May Also Like:The Young Mans And Fear Of Allah

You May Also Like:A One Thousand Camels

Leave a Reply

Your email address will not be published.