روضہ حسین رضی اللہ عنہ

روضہ حسین رضی اللہ عنہ

The Shrine of Hussain (R.A)

یہ کربلا میں حسین رضی اللہ عنہ کی آرام گاہ ہے۔

وہ علی رضی اللہ عنہ کے بیٹے اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے نواسے تھے۔

حسین رضی اللہ عنہ 3 شعبان کو پیدا ہوئے۔

انہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس لایا گیا تو وہ بہت خوش تھے۔

ان کے معدے میں سب سے پہلے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا لعاب دہن تھا۔

حسین رضی اللہ عنہ کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے چچا عباس کی بیوی

ام الفضل رضی اللہ عنہا نے پالا اور دودھ پلایا۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک حدیث میں فرمایا

حسین میرا ہے اور میں حسین کا ہوں۔

اللہ اس سے محبت کرے جو حسین سے محبت کرتا ہے۔

حسین ایک طاقتور نواسہ ہے۔” [ابن ماجہ]

ابن کثیر لکھتے ہیں کہ سیدنا ابوبکر رضی اللہ عنہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم

کے گھر والوں کا بہت احترام کرتے تھے۔

وہ حسین سے محبت، پیار اور خصوصی توجہ سے پیش آتے تھے۔

سیدنا عمر اور عثمان رضی اللہ عنہ کا بھی یہی حال تھا۔ [البدایہ، تجلیات صفدر]

اپنے والد کی وفات کے بعد آپ نے اپنے بڑے بھائی حسن رضی اللہ عنہ

کے ساتھ والد کی طرح برتاؤ کیا وہ ہمیشہ ان کے

ساتھ ہوتے اور اہم معاملات میں ان سے مشورہ کرتے۔

 زری حسین رضی اللہ عنہ 

عثمان رضی اللہ عنہ کی شہادت کے بعد مہاجرین اور انصار نے علی رضی اللہ عنہ کی بیعت کی۔

حسین رضی اللہ عنہ اپنی خلافت کے پانچ سال اپنے والد کے ساتھ رہے۔

وہ بہت فرمانبردار اور عاجز بیٹے تھے اور انہوں نے جمال و صفین کی نمایاں لڑائیوں میں حصہ لیا۔

 (1932)  مسجد حسین رضی اللہ عنہ 

جب حسن (رضی اللہ عنہ) کا انتقال (50 ہجری) میں ہوا تو

حسین (رضی اللہ عنہ) خاندان نبوت میں سب سے بڑے تھے۔

You Might Also Like: Perfect Way To Celebrate The Birth of Prophet Muhammad (PBUH)

عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہ جب گھوڑے پر سوار ہوتے تو

حسین رضی اللہ عنہ کی زین کی رکاب کو پکڑ کر فخر محسوس کرتے۔

حسین رضی اللہ عنہ 10 محرم 61ھ میں کربلا میں شہید ہوئےان کی عمر (57) تھی۔

You Might Also Like: Hazrat Ali R.A.

Leave a Reply

Your email address will not be published.