حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا مینار

حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا مینار

The Minaret of Prophet Isa (A.S)

یہ مینار جو اموی مسجد کے بائیں جانب ہے اسے عیسیٰ مینار کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

یہیں سے حضرت عیسیٰ علیہ السلام آخری زمانہ میں زمین پر واپس آئیں گے۔

مسلمانوں کا عقیدہ ہے کہ عیسیٰ (علیہ السلام) صلیب پر نہیں مرے تھے

لیکن اللہ (ﷻ) نے انہیں جنت میں اٹھایا اور وہ ایک دن دجال

(مخالف مسیح) کو شکست دینے کے لیے واپس آئیں گے۔

ایک حدیث کے مطابق وہ دوسرے آسمان پر ہیں۔

ایک اور حدیث میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا

کہ اللہ تعالیٰ مسیح ابن مریم کو بھیجے گا اس طرح وہ دمشق کے سفید

مشرقی مینار کے پاس اتریں گے دو زرد چادروں میں ملبوس 

دو فرشتوں کے کندھوں پر ٹیک لگائے ہوئے ہوں گے۔” [صحیح مسلم]

وہ ایک ایسی جماعت (گروہ) پر اتریں گے جو اس وقت صالح ہوگی

اور اس میں 800 مرد اور 400 عورتیں ہوں گی۔

You Might also like: Five Lessons For Moses (AS) To Avoid Pharaoh

لوگ اس وقت دجال کے خلاف جنگ کی تیاری کر رہے ہوں گے۔

نماز فجر کا وقت ہو گا اور امام مہدی مسلمانوں کے امیر (رہنما) ہوں گے۔

فجر کی تاریکی سے اچانک ایک آواز سنائی دے گی کہ

تیری فریاد سننے والا آ گیا ہے” – نیک لوگ ہر طرف نظر آئیں گے

اور ان کی نگاہیں عیسیٰ علیہ السلام پر پڑیں گی۔

امام مہدی نماز کی امامت کریں گے اور عیسیٰ علیہ السلام ان کی اقتداء کریں گے۔

رکوع کے بعد یہ بیان کریں گے: اللہ نے دجال کو مار ڈالا اور مسلمان ظاہر ہو گئے۔

حضرت عیسیٰ علیہ السلام دجال کو قتل کریں گے

اور دنیا میں امن اور ہم آہنگی کا عظیم دور آئے گا۔

You Might also like: The Shrine of Hussain (R.A)

Leave a Reply

Your email address will not be published.