خانہ عباس رضی اللہ عنہ

خانہ عباس رضی اللہ عنہ

The House of Abbas (R.A)

یہ مساعی کے باہر کا علاقہ ہے

جہاں حضرت عباس رضی اللہ عنہ کا گھر واقع تھا۔

عباس رضی اللہ عنہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے چچا تھے

اور جب وہ مکہ میں تھے تو انہوں نے ان کی حفاظت کی۔

اسلام کے ابتدائی سالوں میں ایک دولت مند تاجر نے

مکہ مکرمہ میں رہتے ہوئے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی حفاظت کی

لیکن 624 عیسوی (2 ہجری) میں جنگ بدر کے بعد ہی مذہب تبدیل کر لیا۔

ان کی اولاد نے 750 عیسوی میں خلافت عباسیہ کی بنیاد رکھی۔

قریش میں ان کے اعلیٰ مقام کے باوجود رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم

کے ایک اور چچا ابو طالب کافی غریب تھے۔

اس کا ایک بڑا کنبہ تھا اور اس کے پاس کافی وسائل نہیں تھے

کہ وہ ان کی مناسب مدد کر سکے جب جزیرہ نما عرب میں شدید خشک سالی

نے تباہی مچائی تو اس کی غربت زدہ صورت حال بہت زیادہ خراب ہوگئی۔

یہ قحط سالی کا زمانہ تھا دعوتِ نبوت سے پہلے

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نےاپنے  چچا عباس سے فرمایا

آپ کے بھائی ابو طالب کا خاندان بڑا ہے 

جیسا کہ آپ دیکھ رہے ہیں کہ لوگ اس شدید خشک سالی سے

متاثر ہوئے ہیں اور بھوک کا سامنا کر رہے ہیں

آئیے ابو طالب کے پاس جائیں اور ان کے

خاندان میں سے کچھ کی ذمہ داری سنبھال لیں۔

عباس نے منظور کیا اور وہ سب مل کر ابو طالب کے پاس گئے

اور ان سے کہا ہم آپ کے اہل خانہ کا کچھ بوجھ ہلکا کرنا چاہتے ہیں

ابو طالب راضی ہو گئے اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم

نے علی کو اپنے گھر میں لے لیا جعفر جوان ہونے تک اپنے چچا عباس کے پاس رہے۔

 حرم حضرت عباس مسجد 

عباس رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے والد عبداللہ کے

چھوٹے بھائیوں میں سے تھےحضرت عباس رضی اللہ عنہ کو 

آب زم زم مہیا کرنے کا حق دیا گیا تھا

You Might also Like: The Minaret of Prophet Isa (A.S)

جس کے حقوق ان کی اولاد میں منتقل ہوئے تھے۔

وہ مدینہ منورہ میں جنت البقیع کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔

علی رضی اللہ عنہ کا گھر عباس رضی اللہ عنہ کے گھر کے قریب تھا۔

You Might also Like:The Shrine of Hussain (R.A)

You Might also Like: IMAM ABU HANIFA (699-769AD)

Leave a Reply

Your email address will not be published.