!مکمل اسرا اور معراج کی کہانی ، رات کا سفر

!مکمل اسرا اور معراج کی کہانی ، رات کا سفر

The Full and Complete Isra and Miraj Story – The Night Journey!

 

Isra-miraj-summary

معراج اسلام کے سب سے چرچے واقعات میں سے ایک ہے۔ اسرا اور معراج رات کے سفر کے دو حصے ہیں جو

ہمارے پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے لیا۔

 

اسرا اور معراج کی کہانی کا خلاصہ

رجب کی 27 تاریخ 721 (افسوسناک سال – ‘عام الحزن) میں تھی جب ابو طالب اور خدیجہ رضی اللہ عنہ کا انتقال ہوا۔

سورہ اسراء : میں اسراء اور معراج کے بارے میں واضح کیا گیا ہے

  اسرا میں ، رات کا پہلا حصہ

  جبریل حضرت محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے پاس تشریف لائے اور پھر وہ براق پر سوار ہوئے

براق میں انہوں نے صرف ایک سیکنڈ میں مکہ مکرمہ (مسجد الحرام) سے مسجد اقصی کا سفر کیا ، یاد رہے کہ ان دو منزلوں کے درمیان فاصلہ 1239.42 کلومیٹر ہے اور اگر آپ ہوائی جہاز سے سفر کرتے ہیں تو ، اس میں 1 گھنٹہ 52 منٹ کا وقت لگتا ہے ، لیکن ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اسے صرف چند سیکنڈ میں مکمل کیا۔

رات کے دوسرے حصے میں ، جو معراج ہے ، حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم نے سات جنتوں کا سفر کیا ، اور ہر ایک جنت می
انہوں نے درج ذیل لوگوں سے ملاقات کی۔

پہلی جنت پر حضرت آدم علیہ السلام سے ملے
دوسری جنت پر حضرت عیسیٰ علیہ السلام اور حضرت یحییٰ علیہ السلام سے ملے
تیسری جنت پر حضرت یوسف علیہ السلام سے ملے
چوتھی جنت پر حضرت ادریس علیہ السلام سے ملاقات کی
ہارون علیہ السلام سے پانچویں جنت پر ملاقات کی
چھٹی جنت پر موسی علیہ السلام سے ملاقات کی
ساتویں جنت پر ابراہیم علیہ السلام سے ملاقات کی
پھر؛

بیت المومر
اور
سدرت المنتہا

بیت المومر کیا ہے؟

یہ ایک مکان ہے ، جو کعبہ (اللہ کے گھر) کے سیدھے اوپر ، 7 ویں جنت میں واقع ہے۔ فرشتے اس گھر کا طواف کرتے ہیں جیسا کہ ہم کعبہ کے ارد گرد حج و عمرہ کے دوران کرتے ہیں ، زمین پر کعبہ اس کی نقل ہے۔ اس گھر میں روزانہ 70،000 فرشتے آتے ہیں اور عبادت کرتے  ہیں اور یہ عبادت  تاقیامت تک جاری رہے گی۔ (صحیح البخاری 3207 اور صحیح مسلم 164)

سدرت المنتہا کیا ہے؟

یہ ایک لاٹ درخت ہے اور یہ ساتواں جنت کا اختتام ہے۔ یہ حد ہے کہ ہمارے نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے سوا کبھی کوئی نہیں گزرا اور یہ وہ جگہ ہے جہاں نبی اکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے جبرائیل کے ساتھ سفر کیا۔ جہاں اللہ نے محمد (ص) کی درخواست پر 50 نمازیں 5 تک کم کردی ہیں۔

اسرا اور معراج کی تفصیلی کہانی دیکھیں؛

 
 
 

Leave a Reply

Your email address will not be published.