شعبان المعظم کی کہانی

شعبان المعظم کی کہانی

Story Of Shaban al-Moazzam

 

وسط شعبان اسلامی مہینے شعبان المعظم کا 15واں دن ہے۔

اسلامی قمری کیلنڈر کے اس مہینے کی پندرہویں رات کو عرب دنیا میں

لیلۃ البراء یا لیلۃ النصف من شعبان کے نام سے جانا جاتا ہے۔

ہندوستان پاکستان بنگلہ دیش ایران افغانستان وغیرہ میں

اسے شب برات کے نام سے جانا جاتا ہے۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ 15 شعبان کی رات میں

اللہ تعالیٰ رزق زندگی اور موت اور لوگوں کی فلاح و بہبود کے فیصلے کرتا ہے۔

 شعبان کی رات “قدر کی رات” کے بعدلیلۃ البرات سب سے زیادہ بابرکت رات ہے

جيسے15شب برات یا شب برات بھی کہا جاتا ہے۔

امام محمد بن علی الباقر علیہ السلام اور امام جعفر بن محمد الصادق علیہ السلام کے

مطابق اللہ سبحانہ و تعالیٰ نے آج رات اپنی ہر جائز خواہش کو پورا کرنے کا وعدہ کیا ہے۔

 

شب برأت

 

شب برأت یا لیلۃ البرات وہ رات ہے جس میں مسلمانوں کے لیے

خصوصی رحمتیں نازل ہوتی ہیں جیسا کہ پہلے ذکر کیا گیا ہے۔

لہٰذا اس رات کو اللہ سبحانہ وتعالیٰ کے حضور سربسجود ہو کر گزارنا چاہیے

اور ان تمام کاموں سے پرہیز کرنا چاہیے جن سے اللہ تعالیٰ ناراض ہوں۔

شب برأت یا شب برات کو دیکھنے کے لیے اس رات میں جس قدر ہوسکے۔

جاگتے رہنا چاہیے اگر کسی کے پاس بہتر مواقع ہوں تو وہ ساری رات

عبادت و ریاضت میں گزارے تاہماگر کوئی کسی وجہ سے ایسا نہ کرسکے۔

 تو وہ رات کا کافی حصہ، ترجیحاً اس کے دوسرے نصف حصے کو اس مقصد کے لیے منتخب کرسکتا ہے۔

 

You May Also Like:Before Islam World the era of Ignorance

You May Also Like:Story Of Mamun Al-Rashid And Imam Taqi(a.s)

Leave a Reply

Your email address will not be published.