حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم اور کھٹے انگور کی کہانی

حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم اور کھٹے انگور کی کہانی

The Story Prophet Muhammad and the Sour Grapes

The Story Prophet Muhammad and the Sour Grapes

 

ایک دن ایک غریب آدمی انگوروں کا ایک گچھا حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی

خدمت میں ہدیہ کے طور پر لایا۔ وہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے لیے تحفہ لانے کے

قابل ہونے پر بہت پرجوش تھا۔ اس نے انگور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس رکھے

اور کہا اے اللہ کے نبی میری طرف سے یہ چھوٹا سا تحفہ قبول فرمائیں۔ وہ ایک غریب آدمی تھا

جو اس سے زیادہ برداشت نہیں کر سکتا تھا۔ جب اس نے اپنا چھوٹا سا تحفہ پیش کیا

تو اس کا چہرہ خوشی سے دمک اٹھا۔ اس سے معلوم ہوتا تھا کہ وہ رسول اللہ ﷺ

سے بہت محبت کرتے تھے۔آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کا شکریہ ادا کیا۔

اس آدمی نے اس کی طرف امید سے دیکھا تو نبیﷺ نے ایک انگور کھا لیا۔

نبی صلی اللہ علیہ وسلم اس پر مسکرائے۔ پھر نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک اور کھا لیا۔

آہستہ آہستہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے انگوروں کا پورا گچھا خود ہی ختم کر دیا۔

اس نے انگور کسی کو بھی پیش نہیں کیا۔ وہ فقیر جو وہ انگور لے کر آیا تھا بہت خوش ہوا اور خوشی سے چلا گیا۔

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے اردگرد موجود صحابہ کرام حیران رہ گئے۔

عام طور پر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ان کے ساتھ جو کچھ حاصل کرتے تھے

وہ ان کے ساتھ بانٹتے تھے۔ اسے جو کچھ دیا جاتا وہ انہیں پیش کرتا اور وہ مل کر کھاتے۔

عام طور پر وہ پہلے اس شخص کے احترام میں شروع کرتا جس نے اسے تحفہ دیا تھا۔

 

انگور کھٹے

 

لیکن وہ ہمیشہ دوسروں کو پیش کرتا تھا۔ یہ وقت مختلف تھا۔ کسی کو پیش کیے بغیر

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے انگوروں کا گچھا خود ہی ختم کر دیا۔

ایک صحابی نے نہایت ادب سے پوچھا: یا رسول اللہ! تم نے اکیلے سارے انگور کیسے

کھا لیے اور ہم میں سے کسی کو بھی پیش نہیں کیا؟

حضور صلی اللہ علیہ وسلم مسکرائے اور فرمایا کہ میں نے تمام انگور اکیلے کھا لیے کیونکہ انگور کھٹے تھے۔

اگر میں آپ کو پیشکش کرتا، تو آپ مضحکہ خیز چہرے بنا سکتے ہیں اور انگوروں سے اپنی نفرت ظاہر کر سکتے ہیں۔

اس سے اس غریب آدمی کے جذبات مجروح ہوتے۔

میں نے اپنے آپ کو سوچا کہ بہتر ہے کہ میں ان سب کو خوش دلی سے کھا لوں

اور غریب آدمی کو خوش کروں۔ میں اس آدمی کے جذبات کو ٹھیس نہیں پہنچانا چاہتا تھا۔

You May Also Like: Story Of Prophet Muhammad(SAW)

Leave a Reply

Your email address will not be published.