حضرت یحییٰ علیہ السلام کا قصہ

حضرت یحییٰ علیہ السلام کا قصہ

Story ofThe Prophet Yahya(A.S)

 

حضرت یحییٰ علیہ السلام کا قصہ منفرد ہے کیوں قرآن اور انجیل متفق ہیں۔

کہ وہ دوسرے انبیاء سے مختلف ہے اس کا نام یحییٰ ہو گاہم نے اس سے

پہلے کسی کو بھی اس نام کی تمیز نہیں دی (Qs 19:7)

کہانی کا حصہ یہ ہے کہ اللہ نے یحییٰ کے والد زکریا کو گونگا کر دیا! کس طرح آیا

 

حضرت یحییٰ کی پیدائش

 

کئی سالوں سے حضرت یحییٰ کے والدین اولاد پیدا کرنے سے قاصر تھے۔

لیکن، زکریا اور ان کی بیوی اللہ سے دعا کرتے رہے یہاں تک کہ جب وہ بچے

پیدا کرنے کی عمر سے گزر چکے تھے۔

اللہ نے ان کی دعا قبول کی اور کہا کہ ان کے ہاں بیٹا ہوگا زکریا پہلے اللہ کو نہیں مانتا تھا۔

اس نے کہا اے میرے رب میرے ہاں بیٹا کیسے ہو گا جب کہ میری بیوی بانجھ ہے۔

اور میں بڑھاپے سے بالکل کمزور ہو چکا ہوں (Qs 19:8

زکریا کے کفر کی وجہ سے اللہ نے اسے ایسا بنایا کہ وہ بول نہ سکے  تم کسی سے بات نہ کرو حالانکہ تم گونگے نہیں ہو (Qs 19:10)

اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ حضرت یحییٰ کتنے خاص تھے سب سے پہلے، وہ ایک بوڑھی

بانجھ عورت سے پیدا ہوا تھا دوسرا زکریا کفر کی وجہ سے گونگا ہو گیا۔

 

حضرت یحییٰ کا مشن

 

حضرت یوحنا کی بنیادی وزارت اپنی قوم کے سامنے اللہ کی وحی کا اعلان کرنا تھی۔

قرآن کا اعلان ہے خدا آپ کو یحییٰ کی بشارت دیتا ہے

جو خدا کے کلام کی سچائی کا گواہ ہے۔  (Qs 3:39)

انجیل متفق ہے۔ “اور آپ، میرے بچے پیغمبر یوحنا اللہ تعالیٰ کا نبی کہلائیں گے۔

 اپنے لوگوں کو ان کے گناہوں کی معافی کے ذریعے نجات کا علم دینے کے لیے ہمارے

خُدا کی شفقت کی وجہ سے (انجیل، لوقا 1:76-78)

اللہ نے اپنا کلام حضرت یحییٰ کے سپرد کیا اصل مقصد یہ تھا کہ اللہ چاہتا تھ۔

کہ تمام لوگوں کے لیے اپنی محبت کا اعلان کرے اور وہ اپنے گناہوں سے توبہ کریں۔

توبہ کرنے والوں کے لیے انہیں بپتسمہ لینا تھا یہ سچی توبہ کی علامت سمجھا جاتا تھا۔

میں تمہیں توبہ کے لیے پانی سے بپتسمہ دیتا ہوں  (انجیل، میتھیو 3:11)

اسی لیے اسے حضرت یوحنا بپتسمہ دینے والا کہا جاتا ہے۔

حضرت یحییٰ کی زندگی کا خاتمہ

 

اپنا کام مکمل کرنے کے بعد حضرت یحییٰ کو قتل کر دیا گیا یہ اس لیے ہوا کیونکہ

اس نے بادشاہ ہیرودیس کو غیر قانونی شادی کے بارے میں ڈانٹا تھا۔

حضرت یوحنا نے مرنے سے پہلے ایک اور اہم بات کہی جو ہم نے شیئر نہیں کی۔

ایک دن عیسیٰ علیہ السلام حضرت یحییٰ علیہ السلام کے پاس آئے ایک بلند آواز

کے ساتھ، حضرت یوحنا نے اعلان کیادیکھو، خُدا کا برّہ چھٹکارے کی علامت

جو دنیا کے گناہ کو اُٹھا لے جاتا ہے (انجیل، یوحنا 1:29

حضرت یحییٰ کی کہانی کے ذریعے ہم نے دیکھا کہ عیسیٰ علیہ السلام اللہ کی رحمت

کا کامل اظہار تھے اُس کے ذریعے، ہم اپنے گناہ سے بچ سکتے ہیں۔

یہ آپ کی زندگی کے لیے ایک سچا پیغام ہے حضرت یحییٰ کا پیغام آپ پر لاگو ہوتا ہے!

اگر آپ عیسیٰ پر بھروسہ کرتے ہیں تو آپ کو اللہ کی رحمت اور اپنے تمام گناہوں کی معافی ملے گی۔

You May Also Like:The Story Of Prophet Muhammad Visit to Taif

You May Also Like:Hazrat Ali R.A.

Leave a Reply

Your email address will not be published.