اس شخص کی کہانی جو اپنا اونٹ بیچنا چاہتا تھا

اس شخص کی کہانی جو اپنا اونٹ بیچنا چاہتا تھا

Story Of Man Who Wanted To Sell His Camel

Story Of Man Who Wanted To Sell His Camel

 

ایک دن رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کہیں جا رہے تھے کہ

آپ کی ملاقات ایک شخص سے ہوئی جو اونٹ بیچ رہا تھا۔

حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے اونٹ کو پسند فرمایا اور اسے مقررہ قیمت پر خرید لیا۔

حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس اس وقت پیسے نہیں تھے اس لیے آپ نے اونٹوں

کے سوداگر سے کہا کہ وہ اپنے گھر تک اس کا پیچھا کرے اور وہ اسے اس کا حق ادا کر دے گا۔

آدمی راضی ہو گیا۔ وہ جا رہے تھے کہ ایک اور آدمی قریب آیا اور پوچھا

اونٹ کا سوداگر اگر اپنا اونٹ بیچ رہا تھا اور کتنے میں؟ اس نے کہا کہ میں پہلے ہی

اتنی رقم میں اونٹ حضور کو بیچ چکا ہوں۔ اس شخص نے اسے بہتر قیمت کی پیشکش کی

اور وہ اونٹ اس کو فروخت کرنے پر راضی ہوگیا۔ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے اونٹوں کے

سوداگر سے فرمایا کہ چونکہ وہ اونٹ اس کو بیچ چکا ہے اس لیے اس طرح معاہدہ توڑنا غلط ہے۔

اس شخص نے کوئی معاہدہ کرنے سے انکار کیا۔

جب یہ سب ہو رہا تھا تو راہگیر رک گئے اور حیران ہوئے کہ یہ کیا ہو رہا ہے۔

 

قریبی ساتھی

 

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے بالکل ٹھیک بیان کیا۔ صحابہ کرام: اے اللہ کے نبی

 کیا آپ کے پاس کوئی گواہ ہے جو اپنے دعوے کی تائید کرے؟ سوچیں ہم آپ کی مدد کر سکتے ہیں

 ہمیں کیسے یقین ہو گا کہ کون سچا ہے اور کون جھوٹا؟حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے ایک

بہت ہی قریبی ساتھی کا وہاں سے گزر ہوا اور دیکھا کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم لوگوں میں گھرے ہوئے ہیں۔

اس کے بارے میں دریافت کیا تو معلوم ہوا کہ کیا ہوا۔

صحابی: اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم سچ کہتے ہیں اور اونٹ کا سودا کرنے والا جھوٹ بولتا ہے۔

حضور صلی اللہ علیہ وسلم: لیکن جب معاہدہ ہوا تو آپ وہاں موجود نہیں تھے۔

تو آپ وہاں کے بغیر کیسے فیصلہ کر سکتے ہیں؟

صحابی: اے اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم آپ نے فرمایا کہ اللہ ہے اور ہم نے آپ پر ایمان لایا

حالانکہ ہم نے اسے نہیں دیکھا۔ آپ نے ہمیں بتایا کہ قرآن اللہ کا کلام ہے اور ہم آپ پر ایمان لائے۔

آپ نے ہمیں فرشتوں، جنت اور جہنم کے بارے میں بتایا اور ہم نے آپ پر یقین کیا

حالانکہ ہم نے یہ سب چیزیں نہیں دیکھی تھیں۔ یہ کیسے ممکن ہے کہ آپ اتنی معمولی بات پر جھوٹ بولیں؟

Leave a Reply

Your email address will not be published.