یوکرائنی مسلم کونسل کے سربراہ نے مسلمانوں کی صورتحال کی اطلاع دی۔

یوکرائنی مسلم کونسل کے سربراہ نے مسلمانوں کی صورتحال کی اطلاع دی۔

Situation Of  Muslims In The Head Of The

Ukrainian Muslim Council  Reported

 

Situation Of Muslims In The Head Of The Ukrainian Muslim Council Reported

 

یوکرین   کی مسلم کونسل کے سربراہ سیران عارفوف نے سوشل میڈیا پر گردش کرنے والا ایک

ویڈیو کلپ جاری کیا ہے ویڈیو میں وہ بتاتا ہے کہ جنگ کے آخری پچیس دنوں میں وہاں

کے مسلمانوں کے ساتھ کیا ہوا عارفوف نے کہا یوکرین سے تقریباً سو ہزار مسلمان اپنے

گھروں سے بے گھر ہو چکے ہیں ان کا سب سے بڑا تناسب ملک کے مشرقی اور جنوبی علاقوں

میں ہے ان علاقوں میں سب سے زیادہ روسی بمباری ہو رہی ہےانہوں نے مزید کہا کہ

ہزاروں خاندان اپنے گھر بار چھوڑ کر سرحد کی طرف بھاگنے پر مجبور ہوئے ہیں کئی مساجد

بند کر دی گئی ہیں ان میں سے بہت سے اسلامی  افراد کو پناہ اور انسانی امداد

فراہم کر رہے ہیں مادی امداد اور خوراک ادویات اور پناہ گاہ فراہم کرنے کے علاوہ

اسلامی کونسل نے ہمسایہ یورپی ممالک میں محفوظ علاقوں تک پہنچنے کے لیے آسان سڑکوں

اور سرحدی گزرگاہوں کی تلاش میں بے گھر افراد کی رہنمائی اور مدد کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے

عارفوف نے اسلامی ممالک اور تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ اس مشکل صورتحال میں یوکرین

کے بے گھر مسلمانوں کی مدد کریں انہوں نے کہا: “یوکرین میں مسلمانوں کو مدد کی ضرورت ہے

 ہمیں امید ہے کہ مسلم دنیا اس پکار کو سنے گیاقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ پچیس دنوں کی جنگ

میں یوکرین کے اندر آٹھ لاکھ افراد بے گھر ہو چکے ہیں جنگ کے نتیجے میں 32 ملین لوگ ملک چھوڑ کر

بھاگ گئے سیٹلائٹ تصاویر میں دکھایا گیا ہے کہ روسی اپنی گاڑیوں کو چھپانے کے لیے یوکرین کے

دارالحکومت کے گرد خندق کھود رہے ہیں دوسری جانب یوکرین کے جنرل اسٹاف کا کہنا تھا کہ

روسی افواج ابھی تک کیف کو گھیرے میں نہیں لے سکیں۔

YOU MAY AISO LIKE:In Ukraine Russians Living On Their ‘Rage, Shame And Terrible Emptiness’

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.