شب برات (مغفرت کی رات)

شب برات(مغفرت کی رات)

Shab-E-Barat(The Night of Forgiveness)

Shab-E-Barat(The Night of Forgiveness)

 

شعبان کے مہینے میں شب برات پوری دنیا کے مسلمان جوش و خروش سے مناتے ہیں۔

شب برأت میں اللہ تعالیٰ تمام انسانوں کے ماضی میں کیے گئے اعمال

کا حساب لے کر آنے والے سال کی تقدیر لکھتا ہے۔

یہ  مسلم سال کے آٹھویں مہینے شعبان کی تیرہویں یا چودھویں تاریخ کو منایا جاتا ہے۔

یہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے کے آغاز سے پندرہ دن پہلے ہوتا ہے۔

شب برات کے معنی ہیں بخشش کی رات یا کفارہ کا دن۔

لوگ رمضان کی تیاری اور اپنے کیے ہوئے گناہوں کی بخشش

دونوں کے لیے اللہ سے دعا کرتے ہیں۔ 

فارسی زبان میں شب کا مطلب رات اور برات کا مطلب ہے تفویض کی رات۔

تاہم عربی زبان میں دن کو لیلۃ البراء کے نام سے جانا جاتا ہے یعنی آزادی کی رات۔

اگرچہ کچھ لوگ شب برات کو خوش نصیبی کی رات کے طور پر دیکھتے ہیں

اور ایک مشہور افسانہ کہتا ہے کہ اس رات نبی صلی اللہ علیہ وسلم

ہر گھر میں تشریف لاتے ہیں اور دکھی انسانیت کے دکھوں کو دور کرتے ہیں۔

شب برأت کی رات بھی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے مکہ شہر میں داخل ہونے کی یاد مناتی ہے۔

تاہم شیعہ مسلمان اس رات کو اپنے آخری امام کی ولادت سے جوڑتے ہیں۔

 

 شب برات 

 

Shab-E-Barat(The Night of Forgiveness)

 

 سورہ دخان میں لیلیٰ مبارکہ کا ذکر ہے جو کہ قرآن و حدیث کے متعلمین کے نزدیک شب برات ہے۔

شب برات کو وسط شعبان کی رات لیلۃ البراءات (عربی) نصف شعبان

نسفو سیابان (ملائی) نیم شعبان (فارسی) برات کندیلی (ترکی) کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

لوگ ساری رات جاگتے رہتے ہیں اور نفلی دعائیں مانگتے ہیں اللہ (سبحان اللہ و تعالا)

سے ان گناہوں کی معافی مانگتے ہیں جو انہوں نے ماضی میں کیے ہوں۔

You Might also like: Shab-e-Barat History And His Significance

You Might also like: From The Holy Quran And Sunnah Authenticity of Shab-e-Barat

Leave a Reply

Your email address will not be published.