رمضان 2022 ہندوستانی مسلمانوں کے لیے چار وجوہات میں مشکل ہو گا۔

رمضان 2022 ہندوستانی مسلمانوں کے لیے

چار وجوہات میں مشکل ہو گا

Ramadan 2022 Will Be Tough For

Indian Muslims In Four Reason

Ramadan 2022 Will Be Tough For Indian Muslims In Four Reason

 

 نمبر ایک 

رمضان 2022 کچھ ایسا ہوگا جس کے بارے میں ہندوستانی مسلمان ہندوستان میں

ہونے والی بہت سی اسلام مخالف چیزوں کے بعد پریشان ہیں۔

ہم نے پڑھا ہے کہ کس طرح ہندوستان حجاب پہننے والے طلباء کے خلاف جا رہا

ہے اور کس طرح دنیا نے ہندوستان کو متنبہ کیا ہے کہ وہ مسلمانوں کے پیچھے جانے

سے باز رہے۔ مشہور ہالی ووڈ گلوکارہ لتا منگیسکر کی آخری رسومات میں دعا کرنے کے

بعد ہندوتوا گروپوں نے مشہور بالی ووڈ اسٹار شاہ رخ خان کو بھی نشانہ بنایا۔

لیکن مسلمانوں کو آنے والے مقدس مہینے میں ایک اور جنگ لڑنی ہے۔

جیسے ہی رمضان آتا ہے ہم مساجد میں مسلمان نمازیوں کی نمایاں آمد دیکھیں گے۔

رمضان کے مقدس مہینے کے دوران آپ مسلمانوں کو مساجد کے باہر نماز پڑھتے

ہوئے بھی دیکھیں گے کیونکہ مساجد عام طور پر کھچا کھچ بھری ہوتی ہیں۔

لیکن مسلمان عبادت گزاروں کی بڑھتی ہوئی تعداد کو دیکھ کر ہندوتوا انتہاپسندوں

کو کچھ رکاوٹیں پیدا کرنے پر اکسائیں گے۔

 نمبر دو 

ہم حجاب/اسکارف پہننے والی لڑکیوں کے لیے زیادہ ہراساں ہوتے دیکھ سکتے ہیں۔

حجاب قطار ایک رجحان ساز موضوع ہے کیونکہ حجاب پہننے والے طلباء کو حجاب

پہننے کی وجہ سے معطل کر دیا جاتا ہے۔

یہ مستقبل میں خواتین اور ان کے تعلیمی اداروں میں احتجاج کو مزید بھڑکا دے گا۔

 نمبر تین 

ہم مزید احتجاج/جھڑپیں دیکھیں گے۔

چونکہ مقدس مہینے میں مسلمان باہر نکلیں گے  تصادم کے امکانات 80 فیصد زیادہ ہوں گے۔

مقدس مہینہ چند دن کی دوری پر ہے اور حجاب کے تنازع کے بعد حالات مزید خراب ہو جائیں گے۔

اقوام متحدہ نے بھی بھارت کو متنبہ کیا کہ وہ ملک میں مسلم اقلیت پر دباؤ ڈالنا بند کرے۔

 نمبر چار 

نماز پر مزید پابندیاں

ہندوستانی سرکاری اکاؤنٹس کے بعد مسلمانوں کے خلاف مروڑ رہے ہیں، یہ بھی امکان ہے کہ

مسلمانوں پر کسی بھی وجہ سے سڑکوں یا میدانوں میں نماز پڑھنے پر پابندی عائد کردی جائے گی۔

ماہرین توقع کرتے ہیں کہ حکومت اس ماہ مقدس کے دوران باہر یا اجتماعی نماز کو کورونا وائرس

ایس او پیز قرار دے کر پابندی لگائے گی۔

ہندوستان میں مسلمانوں پر جاری ظلم کے بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟ ہمیں نیچے تبصرے کے سیکشن میں بتائیں۔

 

You may also Like:  People Wearing Shorts Banned From Entering Masjid al-Haram and Masjid Nabawi

Leave a Reply

Your email address will not be published.