مسجد عمر رضی اللہ عنہ

مسجد عمر رضی اللہ عنہ

The Mosque of Umar (R.A)

 

 

یہ وہ جگہ ہے جہاں 638 عیسوی میں مسلمانوں کے ہاتھوں یروشلم کی فتح کے

بعد خلیفہ عمر رضی اللہ عنہ نے نماز ادا کی تھی۔

یہ چرچ آف ہولی سیپلچر کے سامنے ہے۔

یروشلم کے سرپرست حضرت عمر رضی اللہ عنہ کو چرچ آف ہولی سیپلچر کے ارد گرد دکھا رہے تھ

ے کہ اس دوران نماز کا وقت ہو گیا۔

پادری نے اسے چرچ میں نماز پڑھنے کی جگہ پیش کی لیکن عمر رضی اللہ عنہ نے

پادری کو سمجھانے سے انکار کر دیا اگر میں چرچ کے اندر نماز پڑھتا تو

میرے بعد آنے والے مسلمان یہ کہہ کر اس پر قبضہ کر لیتے کہ میں نے اس میں نماز پڑھی ہے۔

روایت ہے کہ اس نے ایک پتھر اٹھا کر باہر پھینکا اور جس جگہ وہ گرا وہاں نماز پڑھی۔

موجودہ مسجد عمر (یا مسجد عمر) اس جگہ پر صلاح الدین ایوبی کے بیٹے

افضال علی نے 1193 عیسوی میں تعمیر کروائی تھی۔

مسجد عمر رضی اللہ عنہ کا صحن

Front View Of Entrance Of the Masjid Umar(r.a)

 

جس وقت مسلمانوں نے پہلی بار یروشلم کو فتح کیا اس وقت عیسائی حکمرانوں

نے یہودیوں پر یروشلم اور اس کے آس پاس کے علاقوں پر پابندی عائد کر رکھی تھی۔

جس وقت مسلمانوں نے پہلی بار یروشلم کو فتح کیا اس وقت عیسائی حکمرانوں نے یہودیوں پر یروشلم

اور اس کے آس پاس کے علاقوں پر پابندی عائد کر رکھی تھی۔

عمر رضی اللہ عنہ نے سوفرونیئس (یروشلم کے سرپرست) سے اتفاق کیا

کہ یہودیوں کو رہنے کی اجازت نہیں دی جائے گی لیکن بعد میں اس انتظام کو منسوخ کر دیا۔

عمر رضی اللہ عنہ نے تبریاس کے 70 یہودی خاندانوں کو یروشلم میں آباد ہونے

کی دعوت دی اور انہیں ایک عبادت گاہ بھی بنانے کی اجازت دی۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے کئی نامور صحابہ کرام بھی شہر کے تقدس کی وجہ سے یروشلم میں آباد ہوئے۔

عبادہ بن صامت (رضی اللہ عنہ)، جو قرآن کے معروف ماہرین میں سے ایک ہیں

یروشلم کے پہلے قاضی (اسلامی جج) بنے۔

مسجد عمر رضی اللہ عنہ کا اندرونی منظر

Interior View Of The Masjid Umar (r.a)

 

اس عہد کی ایک نقل جو حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے یروشلم کے (غیر مسلم)

لوگوں کو تحفظ کی یقین دہانی کے لیے تیار کی تھی مسجد کے باہر آویزاں ہے۔

حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا معاہدہ

Pact of Umar r.a

 

اس مسجد کو چٹان کے گنبد سے الجھنا نہیں ہے جسے بعض اوقات غلطی سے مسجد عمر بھی کہا جاتا ہے۔

مسجد اقصیٰ سے متصل ایک چھوٹی مسجد بھی ہے جسے مسجد عمر کے نام سے جانا جاتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.