مسجد نبوی نے نمازیوں کو سورج سے بچانے کے لیے بڑی تبدیلی والی چھتری نصب کی

مسجد نبوی نے نمازیوں کو سورج سے بچانے کے لیے بڑی تبدیلی والی چھتری نصب کی

Masjid An Nabawi Installed Huge Convertible

Umbrellas To Protect Worshippers From The Sun

 

Masjid An Nabawi Installed Huge Convertible Umbrellas To Protect Worshippers From The Sun

 

چھتری سے ڈھکنے والا کل رقبہ 143,000 مربع میٹر تک پہنچ جاتا ہے اور یہ تقریباً 228,000 اجتماعات کو

سورج کی شدید گرمی سے بچا سکتا ہے مسجد نبوی نے حال ہی میں اپنے صحن میں تقریباً 250 بڑی

کنورٹیبل چھتری نصب کی ہیں تاکہ دن کے وقت مزید نمازیوں کو سایہ فراہم کیا جا سکے۔

یہ جدید ترین چھتریوں کو خاص طور پر درست تعمیراتی تکنیک کے ساتھ ڈیزائن کیا گیا ہے۔

یہ چھتریاں دن میں خود بخود کھل سکتی ہیں اور رات کو بند ہو سکتی ہیں معلوم ہوا ہے کہ

چھتریوں کی اونچائی مختلف ہے جہاں پہلی چھتری کی اونچائی 14.40 میٹر جبکہ دوسری کی 15.30 میٹر ہے۔

تہہ کرنے پر چھتری کی اونچائی بھی مختلف ہو سکتی ہے کیونکہ تہہ کرنے پر چھتری 21.70 میٹر کی

اونچائی تک پہنچ جائے گی مدینہ منورہ میں مسجد نبوی کے صحن میں 250 چھتریوں کی تنصیب کو

دو مراحل میں تقسیم کیا گیا ہے  پہلے مرحلے میں 182 چھتریاں لگائی جائیں گی اور باقی 68 دوسرے

مرحلے میں لگائی جائیں گی یہ کنورٹیبل چھتریاں بعد میں 143,000 تک کے کل رقبے پر محیط ہوں گی

جو اس کے نیچے 228,000 نمازیوں کو پناہ دے سکتی ہیں 

اس جدید ٹیکنالوجی میں 436 سپرے پنکھے شامل ہیں جو چھتریوں کے اطراف میں نصب کیے گئے تھے

ہر پنکھے میں 16 سوراخ ہوں گے جو پانی چھڑک سکتے ہیں ایک اندازے کے

مطابق یہ پنکھے فی گھنٹہ 200 لیٹر پانی  کی سپرے کریں گے۔

Masjid An Nabawi Installed Huge Convertible Umbrellas To Protect Worshippers From The Sun

 دو اسٹیشن ہیں جو ہر چھتری میں پنکھے تک پہنچانے سے پہلے اسپرے کے پانی کو صاف کریں گے۔

پنکھا بیرونی ہوا کو نمی کرنے کا ذمہ دار ہے تاکہ زائرین مسجد نبوی کے ماحول سے آرام سے لطف

اندوز ہو سکیں یہ تمام طریقہ کار مرکزی کمرے میں انجام دیا جائے گا جو چھتریوں کی حالت کو

برقرار اور مانیٹر کر سکتا ہے۔

You Might also Like:Explodes In Kabul’s Largest Mosque Injured six People Hand Grenade

Leave a Reply

Your email address will not be published.