امام جعفر صادق علیہ السلام کی زندگی کے چند واقعات

امام جعفر صادق علیہ السلام کی زندگی کے چند واقعات

Some Stories From Life Of Imam Jafar Sadiq (as)

 

ایک دن امام جعفر صادق علیہ السلام دوستوں کے ایک گروہ کے ساتھ بیٹھے کھا رہے تھے۔

کہ ایک شخص آیا اور امام علیہ السلام سے مدد طلب کی۔

امام جعفر صادق علیہ السلام نے اس شخص کو انگوروں کا ایک گچھا دیا۔

اس شخص نے انگور نہ لیے اور امام (ع) سے پیسے مانگے۔

امام (ع) نے اس شخص سے کہا کہ اللہ تعالیٰ اسے وہ عطا فرمائے گا۔

وہ آدمی چلنے لگا پھر واپس آیا اور انگوردے امام (ع) نے اس سے کہا کہ اللہ اسے دے گا۔

تھوڑی دیر بعد ایک اور فقیر آیا اور امام جعفر صادق علیہ السلام سے مدد کی درخواست کی۔

امام (ع) نے اسے انگوروں کا ایک گچھا دیا اس شخص نے ان کو لیا اور اللہ کا شکر ادا کیا۔

امام علیہ السلام نے پھر اس شخص کو کچھ رقم دی اور اس شخص نے اللہ کا شکر ادا کیا۔

امام (ع) نے اس شخص کو اپنی قمیص دی اس نے اسے لے لیا اور امام (ع)

کے لیے دعا کرتے ہوئے چلا گیا اگر وہ شخص اس پر اللہ کا شکر ادا کرتا رہتا

جو امام (ع) اسے دے رہے تھے تو امام (ع) اس وقت تک دیتے رہتے

جب تک کہ اس کے پاس دینے کے لئے کچھ نہ بچا۔

 

 ابو شاکر الدیثام 

 

ایک دن ابو شاکر الدیثام ابو عبد اللہ علیہ السلام کے ایک مباحثے میں کھڑے ہوئے

اور کہا آپ چمکتے ہوئے ستاروں میں سے ہیں آپ کے باپ دادا کمال کے چاند تھے

اور آپ کی مائیں باوقار عورتیں تھیں آپ کا سلسلہ نسب سب سے زیادہ شریف ہے۔

جب اہلِ علم کا تذکرہ کیا جائے تو تمہارے لیے چھوٹی انگلی جھک جاتی ہے۔

یعنی وہ سب سے پہلے شمار کیا جاتا ہے تو بتاؤ اے بحرِ عظیم دنیا کی تخلیق کی کیا دلیل ہے۔

اس نے کہاابو عبد اللہ تم نے وضاحت کی ہے اور تم نے واضح کر دیا ہے۔

تم نے بات کی ہے اور بہتری لائی ہے، تم نے اسے بیان کیا ہے اور مختصر بات کی ہے۔

تم جانتے تھے کہ ہم کسی ایسی چیز کو قبول نہیں کریں گے جس کا ہمیں احساس نہ ہو۔

ہماری آنکھیں یا اپنے کانوں سے سنتے ہیں یا اپنے منہ سے چکھتے ہیں

یا اپنی ناک سے سونگھتے ہیں یا ہماری جلد سے چھوتے ہیں۔

 

 ابو عبد اللہ (ع) نے کہا 

 

ابو عبد اللہ (ع) نے کہاآپ نے پانچ حواس کا ذکر کیا ہے

لیکن وہ عقلی استنباط میں کوئی فائدہ نہیں پہنچائیں گے سوائے ثبوت کے

جس طرح روشنی کے بغیر اندھیرے کو دور نہیں کیا جاسکتا۔

آپ (ع) کا مطلب یہ ہے کہ بغیر عقل کے حواس کبھی بھی ان چیزوں کے

فہم کی طرف رہنمائی نہیں کریں گے جو موجود نہیں ہیں اور یہ کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم

نے شکل کی تخلیق کے بارے میں جو کچھ دکھایا تھا وہ ایک تصور تھا جس کی پہچان علم پر مبنی تھی۔ 

 

You May Also Like:Prophet Salih Story

You May Also Like:The Story Of Prophet Idris(a.s)

Leave a Reply

Your email address will not be published.