خانہ کعبہ – اللہ کا گھر

خانہ کعبہ – اللہ کا گھر

Kabah – House of Allah

خانہ کعبہ، جسے بیت اللہ (اللہ کا گھر) بھی کہا جاتا ہے وہ پہلا گھر ہے

جو انسانیت کے لیے اللہ کی عبادت کے لیے بنایا گیا تھا۔

چھوٹی کیوبڈ عمارت سائز کے لحاظ سے دوسری مشہور عمارتوں کا مقابلہ نہیں کر سکتی

لیکن تاریخ اور انسانوں پر اس کے اثرات بے مثال ہیں۔

کعبہ کی ترقی

خانہ کعبہ کو پوری تاریخ میں متعدد مواقع پر تعمیر کیا گیا ہے۔

خانہ کعبہ کے معمار

فرشتے

حضرت آدم (علیہ السلام)   حضرت شیث (علیہ السلام)

حضرت ابراہیم علیہ السلام اپنے بیٹے اسماعیل علیہ السلام کے ساتھ

اصل کعبہ جسے آدم علیہ السلام نے تعمیر کیا تھا وہ نوح علیہ السلام

کے دور میں عظیم سیلاب سے تباہ ہو گیا تھا۔

اس کا تقریباً کوئی نشان باقی نہیں بچا تھا

سوائے ایک چھوٹی سی پہاڑی

کے جس نے اس کی بنیادوں کو ڈھانپ رکھا تھا۔

حضرت ابراہیم علیہ السلام کے زمانے تک ایسا ہی رہا۔

اللہ تعالیٰ نے ابراہیم (علیہ السلام) کو اپنے بیٹے

اسماعیل (علیہ السلام) کے ساتھ خانہ کعبہ کی تعمیر کا حکم دیا۔

انہوں نے اسے دوبارہ اسی بنیادوں پر تعمیر کیا۔

ابراہیم (علیہ السلام) کعبہ کی تعمیر کے دوران

ایک پتھر پر کھڑے ہوئے جسے مقام ابراہیم کہا جاتا ہے۔

جیسا کہ اسماعیل (علیه السلام) تعمیر کو جاری رکھنے کے لیے پتھروں سے

گزر ے دیواروں کے اٹھتے ہی مقام ابراہیم معجزانہ طور پر بلند ہوتا چلا گیا۔

اللہ تعالیٰ نے ابراہیم (علیہ السلام) کے قدموں کے نشانات کو

ان کی اولاد میں سے مومنین کے لیے یاد دہانی کے لیے پتھر پر باقی رکھا۔

ابراہیم (علیہ السلام) کی بنائی ہوئی تعمیر مستطیل شکل کی تھی

اور اس کی چھت نہیں تھی اس کے زمینی سطح پر دو سوراخ تھے

ایک مشرقی دیوار پر، دوسرا مغربی دیوار پر۔

قریش کے زمانے میں خانہ کعبہ

مکہ مکرمہ میں مسلسل سیلاب کے نتیجے میں کعبہ وقت کے ساتھ ساتھ منہدم ہو گیا تھا۔

You Might also like:Reason Of Solar Eclipse During The Reign Of Muhammad (PBUH)

قریش نے کعبہ کو ڈھانے اور مکمل تزئین و آرائش کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے حطیم نامی نیچی نیم گول دیوار بنا کر اس علاقے کی حد بندی کی۔

انہوں نے میزاب الرحمہ کے نام سے ایک چھت اور پانی کا ایک آؤٹ لیٹ بھی شامل کیا۔

اونچائی تقریباً 8.64 میٹر تک بڑھائی گئی۔

بیت المعمور

خانہ کعبہ کے عین اوپر اس کی چوٹی پر آسمانوں میں بیت المعمور کے نام سے ایک جگہ ہے

You  Might also like:The Full and Complete Isra and Miraj Story The Night Journey

جو وہاں بھی وہی حیثیت رکھتی ہے جو یہاں زمین پر کعبہ کی ہے۔

معراج کی رات میں جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم آسمان

کے ساتویں درجے پر پہنچے  تو آپ کی ملاقات حضرت ابراہیم علیہ السلام سے ہوئی

جو بیت المعمور پر آرام فرما رہے تھے۔

ابراہیم علیہ السلام نے اپنی اولاد کا سلام واپس کیا

اور گواہی دی کہ محمد صلی اللہ علیہ وسلم اللہ کے نبی ہیں۔

You Might also like :Life History Of  Prophet Muhammad From Birth To Death

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.