امام ہادی علیہ السلام کا بچپن

امام ہادی علیہ السلام کا بچپن

Imam Hadi(as)His Childhood

Imam Hadi(as)His Childhood

امام ہادی علیہ السلام نے 7 یا 8 سال کی کم عمری میں امامت کا باضابطہ کردار سنبھالا۔

اس کم عمری میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم مسلمانوں کے لیے نشانِ عبرت بن گئے تھے۔

لوگ ان کی طرف رجوع کرتے اور اپنی زندگی سے متعلق تقریباً ہر چیز میں ان سے رہنمائی حاصل کرتے۔

جب دشمنان اہل بیت (ع) نے یہ دیکھا تو اس صورتحال سے ناخوش ہوئے۔

چنانچہ اس وقت کی خلافت جو کہ اہل بیت علیہم السلام کی مخالفت میں تھی

کے ساتھ مل کر ایک ایسے شخص کی تلاش شروع کر دی جو اس وقت کا سب سے زیادہ علم رکھنے والا ہو

اور اہل بیت علیہم السلام کا حلیف دشمن ہو تاکہ امام ہادی (جیسے) تربیت کے لیے اس کی نگرانی میں رکھا جاتا ہے

اور مسلمانوں بالخصوص شیعوں کو اس تک رسائی حاصل نہیں ہوتی۔ نیز امام ہادی علیہ السلام نے

اپنی زندگی میں جو کچھ کہا یا کیا وہ اپنے استاد سے حاصل کردہ تعلیمات کے مطابق ہوگا۔

 

خدا کی قسم

 

آخر کار عبید اللہ جنیدی جو کہ عراق کے ایک ممتاز عالم اور اہل بیت علیہم السلام کے حلیف دشمن تھے

کو اس کام کے لیے مقرر کیا گیا۔ عبیداللہ جنیدی نے ہمارے دسویں امام امام ہادی علیہ السلام

کو اپنی حفاظت میں لے لیا اور کسی شیعہ کو ان سے ملنے کی اجازت نہیں دی۔

اس طرح امام ہادی علیہ السلام کی رہنمائی ان کے شیعوں کے لیے معطل ہو گئی۔

کچھ دیر بعد ایک شخص عبید اللہ جنیدی کے پاس آیا اور اس سے پوچھا کہ ہاشمی بندہ کیسا ہے؟

عبید اللہ جنیدی جو اہل بیت علیہم السلام کا ایک قسم کا دشمن تھا اس شخص پر سخت غصہ ہوا

اور اس سے کہا کہ اسے ہاشمی خادم نہ کہو کیونکہ وہ خادم نہیں بلکہ بنو ہاشم کا سردار ہے

خدا کی قسم! اس کی کم عمری میں وہ مجھ سے زیادہ علم والا ہے لوگ سمجھتے ہیں کہ میں اسے ڈسپلن کر رہا ہوں

لیکن سچی بات یہ ہے کہ وہ مجھے ڈسپلن کر رہا ہے اللہ کی قسم وہ صرف قرآن کے حافظ ہی نہیں (حافظ) قرآن مجید)

بلکہ اس کا علم بھی رکھتا ہے۔ قطعی طور پر، وہ اس روئے زمین پر سب سے افضل ہے۔

اخلاق: ائمہ معصومین علیہم السلام کے پاس ایک ایسا اعلیٰ علم ہے کہ وہ ان سے جو بھی سوال کیا

جائے اس کا جواب دینے کے قابل ہوتے ہیں۔ آپ کی عمر کتنی ہے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا لیکن

آپ کتنا جانتے ہیں اس سے فرق پڑتا ہے۔ لوگ آپ کے ساتھ بچوں کی طرح سلوک کریں گے

جب تک کہ آپ انہیں دوسری صورت میں نہیں دکھا سکتے – آپ کے علم اور آپ کے اخلاق (کردار) کے ذریعے۔

 

You May Also Like: Excellence Of Hasnain al-Kareemain

Leave a Reply

Your email address will not be published.