ابو طلحہ رضی اللہ عنہ کا باغ

ابو طلحہ رضی اللہ عنہ کا باغ

The Garden of Abu Talha (R.A)

 

مسجد نبوی کے عقب میں واقع یہ علاقہ وہ جگہ ہے جہاں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم

کے زمانے میں ایک باغ موجود تھا جو ابو طلحہ رضی اللہ عنہ کی ملکیت تھا۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اکثر اس باغ میں تشریف

لے جاتے اور اس کے کنویں کا پانی پیتے تھے۔

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ ابوطلحہ مدینہ میں

بہترین باغات کے مالک تھے اور وہ تمام انصاری باغات سے زیادہ تھے۔

ان کا ایک باغ بیر ہا کے نام سے جانا جاتا تھا اوریہ ان کی پسندیدہ ترین سیر گاہ تھی۔

یہ مسجد نبوی کے قریب تھا اور اس کے کنویں کا پانی میٹھا اور وافر تھا۔

جب اللہ تعالیٰ نے قرآن کی یہ آیت نازل فرمائی تو تم اس وقت تک تقویٰ

کو نہیں پہنچ سکتے جب تک کہ تم اپنی پسندیدہ چیزوں میں سے خرچ نہ کرو۔

ابوطلحہ رضی اللہ عنہ نے اپنے آپ کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم

کے سامنے پیش کیا اور اپنا دل کھول دیا۔

اے اللہ کے نبی! مجھے بیر ہا سے بہت پیار ہے۔

جیسا کہ اللہ چاہتا ہے کہ ہم بالکل وہی خرچ کریں جس سے ہمیں پیار ہے

میں نے اس باغ کو اللہ کی راہ میں خرچ کیا جیسا کہ آپ چاہیں

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بہت خوش ہوئے اور فرمایا کہ

اللہ کے لیے کیا ہی اچھا تحفہ ہے میرے خیال میں اگر

تم اسے اپنے ورثاء میں تقسیم کر دو تو اس کا بہترین استعمال ہو گا۔

ابوطلحہ رضی اللہ عنہ گئے اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی نصیحت پر عمل کیا۔

بیر ہا کا مقام

 

You Might Also like: The House of Abdullah bin Umar (R.A)

You Might Also like: The House of Abu Ayyub Ansari (R.A)

Leave a Reply

Your email address will not be published.