بیٹی اللہ کی رحمت ہے۔

بیٹی اللہ کی رحمت ہے۔

Dauhter Is Blessing Of Allah

 

بیٹی اللہ کی سب سے بڑی نعمت ہے۔ زمانہ جاہلیت میں اسلام سے پہلے

لوگ اپنی بیٹی کو دفن کیا کرتے تھے۔ اسلام نے اس روایت کو ختم کر دیا۔

اللہ نے بیٹیوں کو دفنانے سے منع فرمایا ہے۔

نوزائیدہ بچوں کو زندہ دفن کرنے کا یہ وحشیانہ رواج قدیم عرب میں مختلف

وجوہات کی بنا پر عام ہو گیا تھاایک وجہ معاشی تنگی تھی جس کی وجہ سے نوزائیدہ

بچوں کو زندہ دفن کرنے کا یہ وحشیانہ رواج قدیم عرب میں مختلف وجوہات کی بنا

پر عام ہو گیا تھاایک وجہ معاشی تنگی تھی جس کی وجہ سے لوگ چاہتے تھے

کہ کفیل کم ہوں تاکہ زیادہ بچوں کی پرورش کا بوجھ انہیں نہ اٹھانا پڑےلوگ چاہتے تھے

کہ کفیل کم ہوں تاکہ زیادہ بچوں کی پرورش کا بوجھ انہیں نہ اٹھانا پڑے۔

پھر وقت ڈھونڈنا اسے صحرا میں زندہ دفن کرنے کے لیے لے جائے گا۔

اس ظلم اور سختی کو ایک بار ایک شخص نے خود رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے بیان کیا تھا۔

ایک دن میں نے اسے بلایا اور اسے اپنے ساتھ باہر لے گیاراستے میں ہمیں ایک کنواں ملا۔

اس کا ہاتھ پکڑ کر میں نے اسے کنویں میں دھکیل دیااس کے آخری الفاظ

جو میں نے سنے تھے وہ تھے اے ابا اوہ ابا یہ سن کر آپ صلی اللہ علیہ وسلم رو پڑے

اور آپ کی آنکھوں سے آنسو بہنے لگے۔

 

غیر انسانی فعل

 

یہ سوچنا درست نہیں کہ اہل عرب کو اس گھناؤنے اور غیر انسانی فعل کی سختی

کا کوئی احساس نہیں تھاظاہر ہے کہ کوئی بھی معاشرہ خواہ کتنا ہی خراب کیوں نہ ہو

 اس احساس سے بالکل خالی نہیں ہو سکتا کہ ایسی ظالمانہ حرکتیں برائی ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ قرآن نے اس فعل کی بے حیائی پر توجہ نہیں دی ہے

بلکہ اس کا تذکرہ خوفناک الفاظ میں کیا ہے

وَاِذَا الۡمَوۡءٗدَةُ سُـئِلَتۡ‏ 

بِاَىِّ ذَنۡۢبٍ قُتِلَتۡ

ایک وقت آئے گا جب زندہ دفن کی گئی لڑکی سے پوچھا جائے گا کہ اسے کس جرم میں قتل کیا گیا

جو شخص بیٹیوں کی پیدائش کی وجہ سے آزمائش میں پڑ جائے اور پھر وہ ان کے ساتھ حسن سلوک کرے

تو وہ اس کے لیے جہنم سے نجات کا ذریعہ بنیں گی۔ بخاری، مسلم

 

You May Also Like:The Story Fornicator And Pious Drunkard

You May Also Like:Prophet Salih Story

Leave a Reply

Your email address will not be published.