زینب بنت علی رضی اللہ عنہا کی تاریخ، اقتباسات اور زندگی

زینب بنت علی رضی اللہ عنہا کی تاریخ، اقتباسات اور زندگی

History, Quotes And Life of Zainab Bint Ali (RA)

History, Quotes And Life of Zainab Bint Ali (RA)

 

سیدہ زینب بنت علی رضی اللہ عنہا علی رضی اللہ عنہ اور فاطمہ بنت محمد رضی اللہ عنہا کی بیٹی تھیں 

اور حسن رضی اللہ عنہ اور حسین رضی اللہ عنہ کی بہن تھیں۔

[زینب بنت علی رضی اللہ عنہا کون تھیں؟]

وہ ہمارے پیارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی نواسی تھیں۔ 

 علی رضی اللہ عنہ کی پہلی بیوی فاطمہ بنت محمد رضی اللہ عنہا کی تیسری اولاد تھیں۔

وہ ایک بہادر خاتون تھیں، جو کربلا میں یزید کے خلاف اٹھ کھڑی ہوئیں۔ 

کربلا کی جنگ میں دی گئی اس قربانی کی وجہ سے انہیں ’’کربلا کی ہیروئین‘‘ کا لقب دیا گیا۔

[زینب بنت  علی رضی اللہ عنہ  کی زندگی]

وہ مدینہ میں 5 جمادی الاول، 5 ہجری (2 اکتوبر) 626 عیسوی جولین کیلنڈر میں پیدا ہوئیں۔

 حسن رضی اللہ عنہ اور حسین رضی اللہ عنہ کی طرح

 ان کا نام بھی حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے رکھا تھا۔

علی رضی اللہ عنہ کی تین بیٹیوں کا نام “زینب” تھا، اس لیے انہیں “زینب بزرگ” کہا جاتا تھا۔

 جب آپ (رضی اللہ عنہ) کی والدہ (رضی اللہ عنہا) کا انتقال ہوا تو آپ کی عمر صرف 7 سال تھی۔

[زینب بنت علی رضی اللہ عنہا کی جنگی زندگی]

ان کی شادی عبداللہ بن جعفر رضی اللہ عنہ سے ہوئی جو کہ علی رضی اللہ عنہ کے بھانجے تھے۔ 

اس نے اور اس کے شوہر نے معمولی زندگی گزاری۔

زینب رضی اللہ عنہا کے پانچ بچے تھے، چار بیٹے علی رضی اللہ عنہ 

عون رضی اللہ عنہ، محمد رضی اللہ عنہ، عباس رضی اللہ عنہ اور ایک بیٹی ام کلثوم رضی اللہ عنہا تھیں۔

[کربلا میں زینب بنت علی رضی اللہ عنہ کا کردار]

جنگ کربلا میں خاندان کی شہادت کے بعد آپ رضی اللہ عنہ نے خاندان کے دیگر افراد کا ساتھ دیا۔

 وہ (رضی اللہ عنہ) اور ان کے اہل خانہ نے پورے شام کا چکر لگایا۔ 

روایات بتاتی ہیں کہ اس وقت آپ رضی اللہ عنہ اپنے بھائی حسین رضی اللہ عنہ کو مرتے دیکھ کر

 شدید ذہنی اور جسمانی تکلیف میں مبتلا تھیں۔

[زینب بنت علی رضی اللہ عنہا کا خطبہ]

انہیں یزید کی عدالت میں پیش کرنے کے بعد، زینب رضی اللہ عنہا نے ایک خطبہ (خطبہ) کہا

 جسے آج بھی پوری دنیا کے مسلمان کہتے ہیں 

اور یزید کے ناروا سلوک کا مقابلہ کرنے کے لیے استعمال کیے گئے حوالوں اور الفاظ سے متاثر ہوتے ہیں۔

[زینب بنت علی رضی اللہ عنہ کی وفات]

آپ کو سیدہ زینب مسجد میں سپرد خاک کیا گیا۔ 

آپ کی وفات 15 رجب 62 ہجری کو ہوئی اور آپ کی عمر صرف 57 سال تھی۔ 

آج دو مزارات ہیں ایک قاہرہ میں اور دوسرا دمشق میں جہاں کہا جاتا ہے 

کہ وہ مدفون ہیں۔ لیکن، دمشق اپنے وہاں دفن ہونے کے اعلیٰ دعووں کو ظاہر کرتا ہے۔

You Might Also Like: Waldain Kay 4 Haqooq By Molana Raza Saqib Mustafai

Leave a Reply

Your email address will not be published.