باب المغرب (مراکشی دروازہ)

باب المغرب (مراکشی دروازہ)

The Bab al-Magharib (Moroccan Gate)

The Bab al-Magharib (Moroccan Gate)

 

مسجد اقصیٰ کی مغربی دیوار کے ساتھ یہ دروازہ مراکشی دروازے کے نام سے جانا جاتا ہے۔

اس کا نام ملحقہ محلے کے رہائشیوں کے نام پر رکھا گیا تھا جو صلاح الدین ایوبی

کی فتح کے بعد مراکش سے یروشلم میں رہنے آئے تھے۔

اس دروازے کو ‘گیٹ آف دی مورز کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

مراکشی گیٹ دراصل ہیروڈین دور کے ایک اور دروازے کے اوپر بنایا گیا ہے جسے بارکلے گیٹ کہا جاتا ہے۔

سالوں کے دوران اس ابتدائی دروازے کے باہر زمینی سطح کئی میٹر بلند ہوئی

یہاں تک کہ اسے 10ویں صدی میں دیوار سے لگا دیا گیا۔

مراکش کے دروازے کا نشان

Sign of Moroccan gate

 

نئی زمینی سطح پر ایک نیا گیٹ بنایا گیا اور اسے مراکش گیٹ کا نام دیا گیا۔

یہ مغربی دیوار کے سامنے والے علاقے کی طرف لے گیا جس پر

اس وقت شمالی افریقہ کے آباد کاروں کا قبضہ تھا۔

اس علاقے کو اسرائیلیوں نے 1967 کی جنگ کے بعد تباہ کر دیا تھا اور وہاں کے باشندوں کو پناہ گزین بنا دیا تھا۔

مراکشی دروازے کا پل

 

اس وقت لکڑی کا ایک ریمپ ہے (اوپر دیکھیں) جو مغربی دیوار کے علاقے

سے مراکشی دروازے تک براہ راست رسائی فراہم کرتا ہے۔

یہ واحد جگہ ہے جہاں سے غیر مسلم مسجد اقصیٰ میں داخل ہو سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.